سری لنکا کیخلاف شکست کے ذمہ دارہیڈ کوچ ہیں،محسن خان

کوچ کو صرف منصوبہ بندی کرنا ہوتی ہے مگر وہ اس میں بھی ناکام رہے ،سابق کرکٹر
کراچی ۔ سابق قومی چیف سلیکٹر اور ہیڈ کوچ محسن خان نے سری لنکا کیخلاف ٹیسٹ سیریز میں شکست کا ذمہ دار مکی آرتھر کو قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ہیڈ کوچ کے پاس فیلڈنگ، بالنگ اور بیٹنگ کوچ سمیت دیگر اسٹاف موجود ہے جو اپنے شعبوں کی نگرانی کر رہا ہے اور ہیڈ کوچ کو صرف منصوبہ بندی کرنی ہوتی ہے لیکن وہ اس میں بھی بری طرح ناکام ثابت ہوئے ۔ محسن خان کا کہنا تھا کہ اگر ٹیم کامبی نیشن بہتر نہیں بنایا گیا اور وکٹ کو سمجھا ہی نہیں گیا تو اس میں صرف کپتان سرفراز احمد کا قصور نہیں بلکہ ہیڈ کوچ پر بھی پوری ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ اسپیشلسٹ اسپنر کی کمی کیوں محسوس نہیں کر سکے ۔ انہوں نے لیگ اسپنر یاسر شاہ سے حد سے زیادہ بالنگ کو غیر پیشہ ورانہ اقدام قرار دیتے ہوئے کہا کہ ان کا سیریز سے قبل ٹیسٹ بھی لیا گیا

بین اسٹوکس نے برطانوی ماڈل کیٹی پرائس سے متنازع ویڈیو پر معافی مانگ لی

جو مکمل فٹ نہیں تھے لیکن انہیں تھکاوٹ سے بچانے کی کوشش نہیں کی گئی۔ایک سوال پر محسن خان کا کہنا تھا کہ اس اسکواڈ اور کنڈیشنز میں اوپنر شان مسعود کی جگہ تو بنتی ہی نہیں تھی جبکہ احمد شہزاد کو منتخب نہ کرنا سمجھ سے بالاتر بات تھی۔انہوں نے کہا کہ خرم منظور ٹیسٹ فارمیٹ کیلئے اچھا اوپنر ہے مگر اسے اس خوف کی وجہ سے نہیں کھلایا جاتا کہ کہیں وہ اچھی کارکردگی سے ٹیم میں جگہ پکی نہ کرلے ۔ سابق ٹیسٹ اوپنر کا کہنا تھا کہ سری لنکا کیخلاف شکست کا منہ اس لئے دیکھنا پڑا کیونکہ پی سی بی کی نیت خراب ہے اور میرٹ پر کرکٹرز کو کھیلنے ہی نہیں دیا جاتا ۔ انہوں نے مزید کہا کہ غیر ملکی کوچز سے کچھ نہیں ہو گا کیونکہ ملک میں ایک سے بڑھ کر ایک ایسا سابق کرکٹر موجود ہے جو ان سے زیادہ بہتر کام کرنے کی اہلیت رکھتا ہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں