ڈالرکی 100 فیصد کیش درآمد بحال کرنے کی یقین دہانی

کراچی: اوپن مارکیٹ میں امریکی ڈالر کی نسبت پاکستانی روپے کی قدر میں نمایاں کمی کے بعد اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے فاریکس ایسوسی ایشن کو قابل اجازت کرنسیوں کی برآمد کے عوض ڈالر کی 100 فیصدکیش درآمدبحال کرنے کا یقین دلادیا ہے ۔
یہ یقین دہانی منگل کو ڈپٹی گورنراسٹیٹ بینک جمیل احمد نے فاریکس ایسوسی ایشن کے صدر ملک محمد بوستان ودیگرممبرایکس چینج کمپنیوں پر مشتمل ہنگامی اجلاس میں کرائی۔ ڈپٹی گورنراسٹیٹ بینک نے کہا کہ ہر فیصلہ قومی مفاد میں کیا جائے گا اور اگر ایکس چینج کمپنیوں کوڈالر کے علاوہ دیگر غیرملکی کرنسیوں کی برآمدات کے عوض ڈالر کی 100 فیصد کیش درآمدکرنے کی اجازت سے پاکستانی روپے کی قدر مستحکم ہوسکتی ہے تویہ اجازت بدھ سے ہی دے دی جائے گی۔



مزید پڑھیں :پاکستانی کی زرعی مصنوعات عالمی منڈیوں کیلیےغیرموزوں ہوگئیں

دوران اجلاس فاریکس ایسوسی ایشن کے صدر ملک بوستان نے بتایا کہ امریکی صدر ٹرمپ کے پاکستان مخالف بیانات، امداد کی معطلی اور معاشی پابندیوں کی دھمکیوں کے علاوہ اسٹیٹ بینک کی ایکس چینج کمپنیوں کی جانب سے ڈالر کے علاوہ برآمد کی جانے والی دیگر غیرملکی کرنسیوں کے عوض صرف35 فیصد کیش ڈالردرآمدکرنے اور باقی ماندہ 65 فیصد بینکوں کے توسط سے لانے کے احکام یکم جنوری2018 سے موثربہ عمل ہونے سے ڈالر کی قدر میں اضافے کا رحجان غالب ہوا۔انہوں نے بتایا کہ مرکزی بینک کے اس اقدام کے بعد تجارتی بینکوں کی جانب سے پورے ہفتے کے بجائے صرف 2 دن ایکس چینج کمپنیوں کو ان کے حصے کا ڈالر سپلائی کیا گیا جس سے اوپن مارکیٹ میں ڈالر کی طلب ورسد کا توازن بگڑگیااور پیر کوڈالر کے اوپن مارکیٹ ریٹ 113.50 روپے کی بلند سطح تک پہنچ گئے تھے تاہم منگل کی سہ پہراسٹیٹ بینک کے اس نئے اقدام کی اطلاعات کے باعث اوپن مارکیٹ میں روپے کی نسبت ڈالر کی قدردوبارہ90 پیسے گھٹ کر112.40 روپے کی سطح پرآگئی۔

Summary
Review Date
Reviewed Item
ڈالرکی 100 فیصد کیش درآمد بحال کرنے کی یقین دہانی
Author Rating
51star1star1star1star1star

اپنا تبصرہ بھیجیں