موبائل کمپنیوں کا آڈٹ جون سے پہلے مکمل کرلیںگے:ایف بی آر

ایف بی آر حکام نے کہا ہے کہ جون 2018ء سے پہلے تمام 4 موبائل کمپنیوں کا آڈٹ مکمل کر لیں گے ۔
سینیٹ کی قائمہ کمیٹی انفارمیشن ٹیکنالوجی کا سینیٹر شاہی سید کی زیر صدارت اجلاس ہوا،موبائل کمپنیوں کے نمائندے نے کہا کہ چار موبائل کمپنیوں نے 16 ارب روپے برائے راست ٹیکس کی مد میں ادا کئے ۔ایف بی آر کی موبائل کمپنیز سے ٹیکس وصولی سے متعلق بریفنگ دیتے ہوئے حکام نے بتایا کہ ایک نجی موبائل کمپنی کا آڈٹ مکمل کر لیا ہے ، آڈٹ میں کمپنی کی جانب سے ٹیکس ادائیگی کی خلاف ورزی کی نشاندہی نہیں ہوئی۔ایف بی آر حکام نے مزید بتایا کہ کچھ ایسی چیزیں سامنے آئیں ، جن پر ٹیکس تھا لیکن کمپنی نے وصول نہیں کیا 

مزید پڑھیں :ود ہولڈنگ ٹیکس کی وصولیوں میں 14 فیصد کا اضافہ

کمپنی کو کہا کہ یہ حق آپ کا نہیں کہ خود فیصلہ کریں کہ کس پر ٹیکس وصول نہیں کرنا ۔ایک سینیٹر نے اعتراض اٹھایا تھا کہ آیا جو ٹیکس کٹتا ہے وہ قومی خزانہ میں آتا بھی ہے کہ نہیں ،ٹیکس کی مد میں حاصل کی جانے والی رقم قومی خزانے میں جمع ہوتی ہے ۔شبلی فراز نے کہا کہ موبائل کی ایک سو کے کارڈ پر 25 روپے سے زیادہ ٹیکس وصول کیا جا رہا ہے ، یہ کارڈ عام طور پر غریب افراد ہی لیتے ہیں ،ٹیکس کم کر کہ غریب لوگوں کو رعایت کیوں نہیں دی جا رہی؟۔موبائیل کمپنیز حکام کی کمیٹی کو بریفنگ میں بتایا کہ ہماری کل آمدنی 369 ارب روپے ہے ، 4 موبائل کمپنیوں نے 16 ارب روپے برائے راست ٹیکس کی مد میں ادا کئے ،گذشتہ سال ایک ارب 64 کروڑ سے زائد جی ایس ٹی کی مد میں ادا کئے گئے ۔ان کا مزید کہناتھاکہ ہمارے اوپر ٹیکس چوری کے الزامات عائد کئے جاتے ہیں، ہمارے پاس تمام ریکارڈ موجود ہیں، موبائل کمپنیز پر عائد کئے جانے والے ٹیکس پر تشویش ہے ۔

Summary
Review Date
Reviewed Item
موبائل کمپنیوں کا آڈٹ جون سے پہلے مکمل کرلیںگے:ایف بی آر
Author Rating
51star1star1star1star1star

اپنا تبصرہ بھیجیں