حملےکی صورت میں مدد کے لئےبلانے والا زیور

نیویارک:بہت جلد آپ ایک ایسا اسمارٹ کنگن (بریسلٹ) پہن سکیں گے جو کسی حادثے,طبیعت کی خرابی یا حملے کی صورت میں مدد کے لیے پکار سکے گا۔ اگرچہ بازار میں ایسے زیورات اور پہناوے دستیاب ہیں جو کسی حملے کی صورت میں اطراف کو خبردار کرتے ہیں لیکن اس کے لیے کسی نہ کسی طرح بریسلٹ میں لگے بٹن کو دبانا پڑتا ہے تاہم اب ایک اسمارٹ کنگن تیار کرلیا گیا ہے جس میں بٹن دبانے کی بھی ضرورت نہیں کیونکہ اپنے جدید سنسر کی بدولت یہ ازخود خطرے کی نشاندہی کرتا ہے اور مدد کے لیے پکارتا ہے ۔

مزید پڑھیں :شاپنگ اسٹورکی مرمت کےدوران بندرکی ممی برآمد

اگرچہ ابھی یہ پروٹوٹائپ کے مرحلے میں ہے لیکن اس میں جائرو اسکوپ، ایسلرو میٹر، ٹمپریچر اور پریشر سنسر، جی پی ایس اور مائیکروفون تک موجود ہے ۔ اسے یونیورسٹی آف الباما کی کمپیوٹنگ لیب کے ایک طالب علم جایون پٹیل اور ان کے ساتھیوں نے تیار کیا ہے ۔جایون پٹیل کہتے ہیں کہ ‘بریسلٹ میں لگے سنسر اپنے پہننے والے کا اہم جسمانی ڈیٹا مسلسل نوٹ کرتے رہتے ہیں، جائرو اسکوپ کے ذریعے وہ پہننے والے کی سمت اور پوزیشن پر نظر رکھتے ہیں خواہ وہ بیٹھا ہوا ہو یا لیٹا ہو اس طرح اگر کوئی شخص اچانک اپنی پوزیشن بدلتا ہے تو سنسر اسے بھانپ لیتے ہیں’۔کسی ہنگامی صورتحال میں یہ زیور زوردار سیٹی نما آواز اور سرخ روشنی خارج کرتا ہے تاکہ قریب سے گزرنے والے بھی اس سے آگاہ ہوسکیں۔

Summary
Review Date
Reviewed Item
حملےکی صورت میں مدد کے لئےبلانے والا زیور
Author Rating
51star1star1star1star1star

اپنا تبصرہ بھیجیں