تنخواہوں اور پینشن میں 15 فیصد اضافے کی منظوری

اسلام آباد: وزیراعظم شاہدخاقان عباسی نے آئندہ مالی سال 2018-19 کے وفاقی بجٹ میں سرکاری ملازمین کی تنخواہ ومراعات اورپنشن میں اضافے کی اصولی منظوری دیدی ہے ۔
ذرائع کاکہنا ہے کہ آئندہ بجٹ میں سرکاری ملازمین کی تنخواہوں وپنشن میں 15فیصد تک اضافے کاامکان ہے ۔صوبوں کی طرزپروفاقی ملازمین کویوٹیلٹی الاونس کی فراہمی کااعلان بھی بجٹ میں متوقع ہے ۔ذرائع نے بتایا کہ گزشتہ روز وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کی زیرصدارت اعلی سطح کے اجلاس میں وزارت خزانہ کی ریگولیشن ڈپارٹمنٹ کے حکام نے آئندہ مالی سال کے بجٹ میں سرکاری ملازمین کی

مزید پڑھیں :درآمد کیا جانےوالا 30 فیصد دودھ نا قابل استعمال ہے

تنخواہوں وپنشن میں اضافہ سے متعلق تیارکردہ ابتدائی تجاویز پر تفصیلی بریفنگ دی۔وزارت خزانہ ذرائع کاکہنا ہے کہ پرانے پنشنرزکی پنشن میں 20فیصد اضافہ،گریڈ ایک تا 15کے ملازمین کومزید ریلیف فراہم کرنے کیلیے انکے میڈیکل الاونس میں 500روپے اضافہ کی تجویز بھی زیرغور ہے ۔آئندہ مالی سال کے وفاقی بجٹ میں گریڈ ایک تا پندرہ کے ملازمین کیلیے میڈیکل الاؤنس 1500 روپے ماہانہ سے بڑھا کردو ہزارروپے ماہانہ کیے جانے کا امکان ہے ، دفتری اوقات کے بعددیرتک دفاترمیں کام کرنیوالے ملازمین کو ملنے والے لیٹ سیٹنگ الاونس میں اضافہ کی تجویزبھی زیرغورہے ۔ذرائع کاکہنا ہے کہ تنخواہوں وپنشن میں اضافہ کی حتمی منظوری بجٹ سے قبل ہونیوالے وفاقی کابینہ کے خصوصی اجلاس میں دی جائیگی۔

Summary
Review Date
Reviewed Item
تنخواہوں اور پینشن میں 15 فیصد اضافے کی منظوری
Author Rating
51star1star1star1star1star

اپنا تبصرہ بھیجیں